شاعری — نوید صادق

ایک جگنو مری وحشت کا سبب ہوتا تھا
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

ایک جگنو مری وحشت کا سبب ہوتا تھا شام کے وقت مرا حال عجب ہوتا تھا اک ستارہ تھا کہ روشن تھا رہِ امکاں میں اک سمندر، مرے ادراک میں جب ہوتا تھا میری وحشت مرے ہونے کے حوالے سے نہ تھی میرا ہونا میری وحشت کا سبب ہوتا تھا ایک خوشبو تھی کہ آغوش […]

مکمل تحریر پڑھیے »

خود اپنی گواہی کا بھروسہ بھی نہیں کچھ
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

خود اپنی گواہی کا بھروسہ بھی نہیں کچھ اور اپنے حریفوں سے تقاضا بھی نہیں کچھ خود توڑ دئے اپنی انا کے در و دیوار سایہ تو کجا سائے کا جھگڑا بھی نہیں کچھ صحرا میں بھلی گزری، اکیلا تھا تو کیا تھا لوگوں میں کسی بات کا چرچا بھی نہیں کچھ اب آ کے […]

مکمل تحریر پڑھیے »

خراب و خوار مثالِ درختِ صحرا ہوں
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

نذر اقبال خراب و خوار مثالِ درختِ صحرا ہوں میں پائمالِ سرِ راہِ سختِ صحرا ہوں مجھے بھی اپنی طرف کھینچتے ہیں آئینے مگر میں سب سے گریزاں کہ بختِ صحرا ہوں تو کیا یہ لوگ مجھے بھول جائیں گے یکسر تو کیا میں صرف بگولہ ہوں، لختِ صحرا ہوں تو میرے ساتھ کہاں چل […]

مکمل تحریر پڑھیے »

کچھ دن سے جو گھر میں آ پڑا ہوں
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

کچھ دن سے جو گھر میں آ پڑا ہوں میں اپنے قریب آ گیا ہوں دنیا سے غرض بھی ہو تو کیوں ہوں آپ اپنی ہنسی اُڑا رہا ہوں میں نام کمانا چاہتا تھا پہچان گنواتا جا رہا ہوں جس موڑ پہ ہم بچھڑ گئے تھے میں برسوں وہیں کھڑا رہا ہوں کچھ ہو تو […]

مکمل تحریر پڑھیے »

خود سے بہت خفا ہوں میں، خود سے بہت جدا تھا میں
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

خود سے بہت خفا ہوں میں، خود سے بہت جدا تھا میں دیکھا نہیں کہ کیا ہوں میں، سوچا نہیں کہ کیا تھا میں ٹوٹ گیا، بکھر گیا، اپنے لئے تو مر گیا تیری طرف تھا گامزن، خود سے کٹا ہوا تھا میں کیجے ملاحظہ ذرا، دفترِ ماہ و سالِ دل میرا اسیر تھا یہ […]

مکمل تحریر پڑھیے »

ہر نفس مضطرب گزرتی ہے
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

ہر نفس مضطرب گزرتی ہے زندگی کس کے بین کرتی ہے دھیرے دھیرے، نفس نفس، شب بھر ایک آہٹ مجھے کترتی ہے زندگی! دیکھ میں بھی زندہ ہوں تیرے قبضے میں کتنی دھرتی ہے؟ ایک خوشبو کہ پرکشش بھی ہے دشتِ بے خواب میں اترتی ہے میں ہوں اپنی طلب میں گم تو وہاں بے […]

مکمل تحریر پڑھیے »

کون آسیب آ بسا دل میں
admin نے Friday، 5 February 2010 کو شائع کیا.

کون آسیب آ بسا دل میں کر لیا ڈر نے راستہ دل میں اے مرے کم نصیب دل!کچھ سوچ ہے کوئی تیرا آشنا دل میں کم ہے جس درجہ کیجئے وحشت گونجتا ہے دماغ سا دل میں عکس بن بن کے مٹتے جاتے ہیں رکھ دیا کس نے آئنہ دل میں میں ہوں، ماضی ہے […]

مکمل تحریر پڑھیے »

پھر وہی ضد کہ ہر اک بات بتانے لگ جائیں
admin نے Thursday، 18 June 2009 کو شائع کیا.

پھر وہی ضد کہ ہر اک بات بتانے لگ جائیں اب تو آنسو بھی نہیں ہیں کہ بہانے لگ جائیں تیری تکریم بھی لازم ہے شبِ اوجِ وصال پر یہ ڈر ہے کہ یہ لمحے نہ ٹھکانے لگ جائیں کچھ نمو کے بھی تقاضے ہیں سرِ کشتِ خیال ورنہ ہم لوگ تو بس خاک اُڑانے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


جملہ حقوق بحق "نوائے ادب" محفوظ ہیں.
ورڈ پریس "نوائے ادب تھیم" منجانب م بلال م