شاعری — رضی الدین رضی

میں چلا شہر سے زندگی چھوڑ کر
admin نے Thursday، 27 August 2009 کو شائع کیا.

دوستی چھوڑ کر دشمنی چھوڑ کر میں چلا شہر سے زندگی چھوڑ کر ہم بھی کیا لوگ ہیں بڑھتے جاتے ہیں بس تیرگی کی طرف روشنی چھوڑ کر وقت رخصت وہ مجھ سے یہ کہنے لگی تم چلے جا ءو گے واقعی چھوڑ کر؟ وصل ممکن نہیں پھر بھی چلتے رہو تھام کر ہاتھ اس […]

مکمل تحریر پڑھیے »

ہونا نہیں ہے
admin نے Thursday، 27 August 2009 کو شائع کیا.

اگر اب معجزہ ہونا نہیں ہے ہمیں وقفِ دعا ہونا نہیں ہے محبت معجزہ ہونا نہیں ہے اسے اب جا بجا ہونا نہیں ہے وہ میرے ساتھ ہونا چاہتی تھی پھر اس نے کہہ دیا ہونا نہیں ہے ہم اتنے پاس کیوں بیٹھے ہوئے ہیں اگر ہم نے جدا ہونا نہیں ہے پیمبر تو نہیں […]

مکمل تحریر پڑھیے »

نہیں چاہتے ہیں
admin نے Thursday، 27 August 2009 کو شائع کیا.

راہ میں ایک بھی دیوار نہیں چاہتے ہیں لوگ اب عشق میں آزارنہیں چاہتے ہیں چاہنے والے ترا وصل یقیناً چاہیں ہاں مگر ہم سے طلبگار نہیں چاہتے ہیں ہم کھانی سے کئی بار نکلنے والے اس میں اب کوئی بھی کردار نہیں چاہتے ہیں اب زباں کاٹ کے سر بھی مرا فوراً کاٹیں آپ […]

مکمل تحریر پڑھیے »

حقیقت میں مر گیا
admin نے Friday، 7 August 2009 کو شائع کیا.

دکھ تو نہیں کہ تنہا مسافت میں مر گیا اچھا ہوا میں تیری رفاقت میں مر گیا حاکم خود اپنے عہدِ حکومت میں مر گیا زندہ وہی رہا جو بغاوت میں مر گیا کچھ نفرتوں کی نذرہوا میرا یہ وجود باقی جو بچ گیا تھا محبت میں مر گیا مجھ کو کبھی حصار میں کب […]

مکمل تحریر پڑھیے »


جملہ حقوق بحق "نوائے ادب" محفوظ ہیں.
ورڈ پریس "نوائے ادب تھیم" منجانب م بلال م