10 منٹ )نکیال سیکٹر(
خرم ابن شبیر نے Wednesday، 25 January 2017 کو شائع کیا.

کچھ کہنے کے لیے کچھ سننا پڑتا ہے اور کچھ دیکھانے کے لیے کچھ دیکھنا پڑتا ہے۔ میں نے بھی کوٹلی کے حوالے سے بہت باتیں سن رکھی تھیں۔ کوٹلی آزاد کشمیر بہت خوبصورت شہر ہے۔ عرصہ ہوا یہ بات سنی ہوئی تھی لیکن کبھی دیکھنے کا اتفاق نہیں ہوا تھا۔ بس ایک بہانہ بنا کوٹلی جانے کا اور میں نے فوراََ سے تیاری پکڑ لی۔‏ابو نور سحر‏ کی تصویر

کوٹلی آزاد کشمیر کا ایک شہر ہے جو کہ میرپور سے دو سڑکوں کے ذریعے جڑا ہوا ہے۔ راولپنڈی سے کوٹلی کا فاصلہ 141 کلومیٹر ہے اور یہ کم سے کم چار سے پانچ گھنٹے میں طے ہوتا ہے۔ اس کا زیادہ تر علاقہ پہاڑی ہے اور یہی اس کی خوبصورتی بھی ہے۔ موسم تقریبن سرد ہی رہتا ہے لیکن تھوڑی سی گرمی بھی پڑتی ہے۔

کوٹلی پہنچ کر میں نے اپنے کزن عامر کو کہا کہ میں نے کوٹلی کی سیر کرنی ہے تو مجھے ساتھ لیے جانا۔ مہران ‏ابو نور سحر‏ کی تصویربھی ساتھ تیار ہو گیا اور ہم تینوں بائیک پر کوٹلی کی سیر کو نکل پڑے۔ کیا شاندار نظارہ تھا مختلف مقام  پر پہنچ کر ہم نے تصویریں بنائی اور ساتھ ساتھ انجوائے بھی کرتے رہے۔ اتنے میں مجھے خیال آیا کہ نکیال سیکٹرچلتے ہیں باڈر بھی دیکھ لیں گے۔ تو عامر نے بائیک کا روخ نکیال کی طرف کر دیا۔ شام کے 4 ہو رہے تھے اور مہران نے کہا بھائی آپ شام تک واپس آ جائے گے کیا تو اس پر عامر نے کہا چلو کسی سے پوچھلیتے ہیں کہ کتنا صرف رہ گیا ہے۔ ایک لڑکا وہاں فون پر بات کر رہا تھا ہم نے اس سے پوچھا تو اس نے کہا بس 10 منٹ کا راستہ ہے آگے۔ ہم نے سوچا پھر تو آرام سے واپس آ جائے گے۔ ہم باتیں کرتے کرتے آگے کی طرف چلتے رہے تقریباََ 30 منٹ کے سفر کے بعد مہران نے کہا یہاں کسی اور سے بھی پوچھ لیں ایسا نا ہو اس لڑکے کو پتہ نا ہو ساتھ ہی ایک بزرگ جا رہے تھے ان سے پوچھا تو انہوں نے کہا بس دس منٹ کا راستہ ہو گا۔ پھر ہم آگے چلتے رہے چلتے چلتے پھر ہمیں 20 منٹ ہو گے تھے وہاں مدرسے کے بچے گزر رہے تھے میں نے بائیک روکنے کا کہا اور بچوں سے پوچھنے لگا کہ بیٹا نیکیال سیکٹر کتنی دور ہے تو انہوں نے کہا یہ جو سامنے آپ کو آبادی نظر آ رہی ہے یہ نکیال ہے وہاں سے آپ کسی سے پوچھ لیں تو آپ کو پتہ چل جائے گا۔ سامنے نظر آنے والی آبادی میں پہنچتے پہنچتے ہمیں مغرب ہوگئی وہاں ہم ایک ہوٹل میں کھانہ کھایا کیونکہ پورا دن ہم نے کھان‏ابو نور سحر‏ کی تصویرا نہیں کھایا تھا۔اور ہوٹل والے سے پوچھا محترم یہ نکیال سیکٹر کتنے دور ہے یہاں سے تو انہوں نے کہا بیٹا بس 10 منٹ کی مسافت پر ہے۔ ہم تینوں کی ہنسی نکل گئی۔ نجانے یہ دس منٹ کب ختم ہونگے ہم نے وہی سے اپنا ارادہ بدلہ اور اس کے بعد واپسی کا راستہ لیا اور تقریبان   7 بجے کے قریب گھر پہنچے۔ مجھے ابھی تک سمجھ نہیں آئی کہ وہ کون سی گھڑی ہے جس کے 10 منٹ ختم ہی نہیں ہوتے

خرم ابن شبیر


ٹیگز:-
6 مئی 2016 کے بعد
خرم ابن شبیر نے Saturday، 7 January 2017 کو شائع کیا.

6 مئی 2016 کے بعد بلاگ کے حوالے سے جب بھی مجھ سے کچھ پوچھتا ہے تو میں آنکھیں بند کرکے ایم بلال  بھائی کے حوالے کر دیتا ہوں۔ کیونکہ  یہی وہ ہستی ہے جس نے میری بلاگ کے حوالے سے بہت مدد کی بلکہ میرا بلاگ صرف اور صرف اسی ہستی کی وجہ سے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
تم اگر ایسے ہو جاؤ نا؟
خرم ابن شبیر نے Friday، 6 May 2016 کو شائع کیا.

ہر جگہ میں ہر طرح کے لوگ ہوتے ہیں۔ اچھے بھی بُرے بھی، صبر والے بھی، بے صبرے بھی، ہمیت والے بھی ، کم ہمیت والے بھی، غرز یہ کہ ہر جگہ میں ہر طرح کے لوگ موجود ہوتے ہیں۔ لیکن اس بات کی گرنٹی ہے کہ اس وقت دنیا میں کوئی بھی شخص ایسا […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
لذت آموز
خرم ابن شبیر نے Friday، 22 April 2016 کو شائع کیا.

سبق آموز کا اب دور نہیں رہا۔ ہوتا تھا کسی زمانے میں ہمارے استاد ہمیں کہانیاں سنایا کرتے تھے، کتابوں میں بھی ایسی کہانیاں موجود ہوتی تھی جس سے ہمیں سبق ملتا تھا اور نیک کام کرنے اور نیکی کرنے کا شوق پیدا ہوتا تھا۔ اچھے دن تھے نا اتنی بے حیائی تھی اور نا […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
میری کتاب کی تیاریاں
خرم ابن شبیر نے Friday، 8 April 2016 کو شائع کیا.

ایک بہت پرانی تحریر میری کتاب کی تیاریاں میں جب گھر میں داخل ہوا تو گھر میں رونق لگی ہوئی تھی شاہد میری ہی کوئی بات چل رہی تھی۔ کیونکہ میرے اندر آتے ہی یاسر نے کہا “لو جی شاعر صاحب آ گے ہیں” یاسر میرا کزن ہے بہت ہی ہنس مکھ ہے اور اس […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
پرفیوم، باڈی سپرے کی فروخت جاری ہے
خرم ابن شبیر نے Monday، 11 January 2016 کو شائع کیا.
خود اعتمادی، ہمت اور یقین
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 22 September 2015 کو شائع کیا.
سپاہی ہو تو کیسا ہو
خرم ابن شبیر نے Saturday، 29 August 2015 کو شائع کیا.
بلاگرز ہوشیار
خرم ابن شبیر نے Sunday، 24 May 2015 کو شائع کیا.
پاکستان میں کرکٹ الحمداللہ
خرم ابن شبیر نے Saturday، 23 May 2015 کو شائع کیا.
دولت کا عشق
خرم ابن شبیر نے Friday، 15 May 2015 کو شائع کیا.
مجھے لگتا ہے کہ میں اپنے راستے سے ہٹ گیا ہوں
خرم ابن شبیر نے Friday، 1 May 2015 کو شائع کیا.
بابا اب آپ کو نہیں لگے گئی
خرم ابن شبیر نے Monday، 6 April 2015 کو شائع کیا.
نورِ سحر کا آج سکول میں پہلا دن
خرم ابن شبیر نے Monday، 6 April 2015 کو شائع کیا.
ہم ایسے ہی بے وقوف رہنا چاہتے ہیں
خرم ابن شبیر نے Wednesday، 25 March 2015 کو شائع کیا.
اور ہم ہمسایوں کے حقوق کی بات کرتے ہیں
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 24 February 2015 کو شائع کیا.
اللہ تعالیٰ نے مجھے ایک اور چاند سی بیٹی عطا کی ہے
خرم ابن شبیر نے Thursday، 1 January 2015 کو شائع کیا.
خصوصی دعا ہمارے لیے
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 30 December 2014 کو شائع کیا.
سانحہ پیشاور اور ڈھوک حسو کی عوام
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 23 December 2014 کو شائع کیا.
دُکھ
خرم ابن شبیر نے Saturday، 20 December 2014 کو شائع کیا.
free counters