چوسر(چار)
خرم ابن شبیر نے Friday، 29 September 2017 کو شائع کیا.

نشہ چاہے جس طرح کا بھی ہو انسان کو اندر سے توڑ دیتا ہے۔ یہی کوئی حالات ہم دوستوں کی بھی ہے۔ہوا کچھ یوں کہ وہ تینوں بہت بے چینی سے میرا انتظار کر رہے تھے۔ میں نے ان کو دس منٹ کا ٹائم دیا ہوا تھا ۔جلدی جلدی کام ختم کرنے کی کوشش  کی لیکن کیا کرتا کام ختم ہی نہیں ہو رہا تھا۔ خیر مجھے بار بار فون کالز آ رہی تھی۔ میں فون سنتا اور پھر 5 منٹ کا کہہ کر فون بند کر دیتا اور اپنی کوشش کرتا کہ کام جلدی ختم کروں اور کسی طرح اڑ کر ان کے پاس پہنچ جاؤں۔ میرے دوست میرے لیے بہت بے چین ہو رہے تھے۔ میں نے سوچا اگر اب کال آئی تو میں اپنا کام نامکمل چھوڑ کے چلا جاؤں گا۔ پھر ہوا بھی ایسے کہ مجھے ایک بار پھر کال آئی اور میں نے کال پر دوستوں کو بتایا کہ بس میں یہاں سے نکل آیا ہوں۔

میں نے موٹر سائیکل سٹارٹ کیا اور اپنی طرف سے بہت تیاز رفتار میں چلاتا ہوا دوستوں کی طرف نکل پڑا۔ راستے میں رش کی وجہ سے تھوڑی مشکل ہو رہی تھی لیکن میں نے شاٹ کٹ لیا اور جلد سے جلد دوستوں کے پاس پہنچنے کی کوشش کرنے لگا۔ راستے میں بھی مجھے فون کالز آ رہی تھی لیکن میں نے فون کی طرف توجہ نا دی اور موٹر سائکل کو اور تیز کرنے لگا کچھ دیر کے بعد موبائل پر کال آنا بند ہوگی۔ میں سمجھا دوستوں کو یقین ہو گیا ہے کہ میں موٹر سائیکل چلا رہا ہوں اس لیے وہ فون نہیں کر ہے کیونکہ میں موٹر سائیکل پر سوار ہو کر فون نہیں سنتا۔ اب کچھ مجھے بھی تحمل  ہو چکا تھا اس لیے میں اب محتاظ طریقے سے بائیک چلا رہا تھا۔ میں یہ سوچ رہا تھا کہ وہ تینوں میرا انتطار کر رہے ہونگے میرے وہاں پہنچتے ہی ایک ہنگاما سا شروع ہو جائے گا اور ہم خوب انجوائے کریں گے۔ میں نے بائیک روکا اور موبائل نکال کر مس کالز دیکھی تو سکوں ہوا کہ اس کے بعد کوئی کال نہیں تھی۔ میں نے بائیک کو لاک لگایا اور دروازے سے اندر  داخل ہوتے ہی خوشی سے بولا میں آ گیا ہوں دوستوں۔ لیکن دوستوں کی طرف سے کسی طرح کا کوئی ردِ عمل نہیں تھا۔

کیونکہ مجھ سے پہلا ہی ایک دوست آ چکا تھا۔ ان کی چوسر پوری ہو چکی تھی اور وہ مزے سے تاش کھیل رہے تھے

از خرم ابن شبیر


ٹیگز:-
مقابلہِ تحریر
خرم ابن شبیر نے Sunday، 3 September 2017 کو شائع کیا.

کچھ بچوں کو لکھنے کا شوق ہے اور انہوں نے مجھے کہا ہے کہ میں ان کو کوئی موضوع دیا کروں  اور وہ اس موضوع پر لکھا کریں۔ سب سے پہلا موضوع ان کو دیا گیا تھا “اردو ادب کی ہماری زندگی میں کیا اہمیت ہے” اس حوالے سے کچھ بچوں نے تحریریں لکھیں تھی۔ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
قربانی کا مزہ تو اس دفعہ آیا
خرم ابن شبیر نے Sunday، 3 September 2017 کو شائع کیا.

بکرا عید کا مزہ ہی تب آتا ہے جب قربانی کی جائے میں نے دیکھا ہے کہ ہم کچھ سالوں سے اللہ کے فضل سے قربانی کر رہے ہیں۔ اکثر ایسا ہی ہوتا ہے کہ قربانی کرنے کے لیے قصائی کی تلاش کی جاتی ہے جو کہ عید والے دن بہت ہی مشکل سے ہاتھ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


10 منٹ )نکیال سیکٹر(
خرم ابن شبیر نے Wednesday، 25 January 2017 کو شائع کیا.

کچھ کہنے کے لیے کچھ سننا پڑتا ہے اور کچھ دیکھانے کے لیے کچھ دیکھنا پڑتا ہے۔ میں نے بھی کوٹلی کے حوالے سے بہت باتیں سن رکھی تھیں۔ کوٹلی آزاد کشمیر بہت خوبصورت شہر ہے۔ عرصہ ہوا یہ بات سنی ہوئی تھی لیکن کبھی دیکھنے کا اتفاق نہیں ہوا تھا۔ بس ایک بہانہ بنا […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
6 مئی 2016 کے بعد
خرم ابن شبیر نے Saturday، 7 January 2017 کو شائع کیا.

6 مئی 2016 کے بعد بلاگ کے حوالے سے جب بھی مجھ سے کچھ پوچھتا ہے تو میں آنکھیں بند کرکے ایم بلال  بھائی کے حوالے کر دیتا ہوں۔ کیونکہ  یہی وہ ہستی ہے جس نے میری بلاگ کے حوالے سے بہت مدد کی بلکہ میرا بلاگ صرف اور صرف اسی ہستی کی وجہ سے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
تم اگر ایسے ہو جاؤ نا؟
خرم ابن شبیر نے Friday، 6 May 2016 کو شائع کیا.
لذت آموز
خرم ابن شبیر نے Friday، 22 April 2016 کو شائع کیا.
میری کتاب کی تیاریاں
خرم ابن شبیر نے Friday، 8 April 2016 کو شائع کیا.
پرفیوم، باڈی سپرے کی فروخت جاری ہے
خرم ابن شبیر نے Monday، 11 January 2016 کو شائع کیا.
خود اعتمادی، ہمت اور یقین
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 22 September 2015 کو شائع کیا.
سپاہی ہو تو کیسا ہو
خرم ابن شبیر نے Saturday، 29 August 2015 کو شائع کیا.
بلاگرز ہوشیار
خرم ابن شبیر نے Sunday، 24 May 2015 کو شائع کیا.
پاکستان میں کرکٹ الحمداللہ
خرم ابن شبیر نے Saturday، 23 May 2015 کو شائع کیا.
دولت کا عشق
خرم ابن شبیر نے Friday، 15 May 2015 کو شائع کیا.
مجھے لگتا ہے کہ میں اپنے راستے سے ہٹ گیا ہوں
خرم ابن شبیر نے Friday، 1 May 2015 کو شائع کیا.
بابا اب آپ کو نہیں لگے گئی
خرم ابن شبیر نے Monday، 6 April 2015 کو شائع کیا.
نورِ سحر کا آج سکول میں پہلا دن
خرم ابن شبیر نے Monday، 6 April 2015 کو شائع کیا.
ہم ایسے ہی بے وقوف رہنا چاہتے ہیں
خرم ابن شبیر نے Wednesday، 25 March 2015 کو شائع کیا.
اور ہم ہمسایوں کے حقوق کی بات کرتے ہیں
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 24 February 2015 کو شائع کیا.
اللہ تعالیٰ نے مجھے ایک اور چاند سی بیٹی عطا کی ہے
خرم ابن شبیر نے Thursday، 1 January 2015 کو شائع کیا.
free counters