سانحہ پیشاور کا دکھ ایک ایسا دکھ ہے جس نے پوری قوم کو دکھی کر دیا۔ بہت سارے لوگوں کی آنکھوں میں نمی تو میں نے خود دیکھی ہے۔ ڈھوک حسو کی عوام جو تقریباََ ہر کام میں حصہ لیتی ہے۔ لیکن سانحہ پیشاور کے حوالے سے تو بہت ہی جذباتی ہوگے تھے۔

میں نے پہلی دفعہ دیکھا ہے کہ تقریباََ پورے ڈھوک حسو کی مارکیٹیں بند تھیں۔ لوگ افسوس کر رہے تھے۔ لوگوں نے بچوں کے لیے اور ان کے والدین کے لیے دعائیں کی، قرآن خانی کروائی گئی، غائبانہ نمازِ جنازہ پڑھا گیا اور ریلیاں بھی نکالی گئی۔ سب پیشاور والوں کے دکھ میں برابر کے شریک ہوئے۔

اللہ تعالیٰ پوری قوم کو اسی  طرح متحد کر دے آمین۔