محفوظات برائے ”تقطیع“ زمرہ
مُسدّس کے ایک بند کی تقطیع
خرم ابن شبیر نے Friday، 5 March 2010 کو شائع کیا.

مُسدّس مُسد دس کسی نے یہ بقراط سے جا کے پوچھا مرَض تیرے نزدیک مہلک ہیں کیا کیا کہا دکھ جہاں میں نہیں کوئی ایسا کہ جس کی دوا حق نے کی ہو نہ پیدا فعو لن فعو لن فعو لن فعو لن کسی نے یبق را طسے جا ک پو چا مرض تے رِ نز دی ک مہ لک ہ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
‘ذوالبحرین’اور ‘مساوی الاوزان۔ از فتح الدین بشیر صاحب
خرم ابن شبیر نے Wednesday، 3 March 2010 کو شائع کیا.

اردو محفل پر ایک جگہ بحث کے دوران ذوالبحرین اور مساوی الوازان کا ذکر آیا تو فاتح الدین بشیر صاحب ان اس کو مختصر یوں سمجھانے کی کوشش کی ذوالبحرین مصرع کی مثال: خوابِ غفلت کا گزر چشمِ نگہباں میں نہ تھا اس مصرع کی تقطیع کی جائے تو اشباع کے ساتھ یہ بحر رمل […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
تقطیع میں میری غلطی اور محمد وارث صاحب کی اصلاح
خرم ابن شبیر نے Tuesday، 2 March 2010 کو شائع کیا.

ابھی تو پر بھی نہیں تولتا اوڑان کو میں بلا جواز کھٹکتا ہوں آسمان کو میں تقطیع ابھی تو پر بھی نہیں تولتا اوڑان کو میں بلا جواز کھٹکتا ہوں آسمان کو میں مفا علن فَعِلاتن مفاعلن فعلان فعلان کی مجھے سمجھ نہیں آ رہی اس کو کس طرح تقطع کرنی ہے ف ن عل کو ان میں کیا […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
شکیب جلالی کے ایک شعر کی تقطیع
خرم ابن شبیر نے Monday، 1 March 2010 کو شائع کیا.

ادھر سے گزرا تھا ملکِ سخن کا شہزادہ کوئی نا جان سکا ساز و رخت ایسا تھا بحر: مجتث مثمن مخبون مخذوف مقطوع افاعیل: مَفَاعِلُن فَعِلاتُن مَفَاعِلُن فَعلُن (عین ساکن کے ساتھ) اس بحر کے آخری رکن میں چار وزن آ سکتے ہیں۔ تفصیلات دیکھیئے۔ ادھر سے گز – مفاعلن رَ تَ ملکے – فعلاتن […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
ناصر کاظمی کے دو اشعار کی تقطیع
خرم ابن شبیر نے Sunday، 28 February 2010 کو شائع کیا.

غم ہے یا خوشی ہے تو میری زندگی ہے تو میں تو وہ نہیں‌رہا ہاں مگر وہی ہے تو یہ بحر ہزج مثمن اشتر مقبوض کی مربع شکل ہے، مربع وہ بحر ہوتی ہے جس کے ایک مصرعے میں دو رکن (شعر میں چار رکن) ہوتے ہیں۔ مثمن بحر کے افاعیل ‘فاعلن مفاعلن فاعلن مفاعلن’ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
پروین شاکر کے دو اشعارکی تقطیع
خرم ابن شبیر نے Saturday، 27 February 2010 کو شائع کیا.

تجھ سے تو کوئی گلہ نہیں ہے قسمت میں مری’ صلہ نہیں ہے بحر: ہزج مسدس اخرب مقبوض مخذوف وزن: مفعول مفاعلن فعولن (اس بحر میں دیگر وزن بھی آ سکتے ہیں، جیسے تسکینِ اوسط کے زخاف کی مدد سے مفعولن فاعلن فعولن)۔ تقطیع: تجھ سے تُ – مفعول کُ ئی گلہ – مفاعلن نہیں […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
میر کی بحرِ ہندی
خرم ابن شبیر نے Wednesday، 3 February 2010 کو شائع کیا.

اردو محفل پر جب ہم نے تقطیع کا سلسلہ شروع کیا تو اس وقت مجھے کسی بھی بحر کے بارے میں کچھ بھی پتہ نہیں تھا یہ تو محمد وارث صاحب کی مہربانی ہے جن کی وجہ سے آج ایک دو بحروں کے بارے میں کچھ جانتے ہیں۔ تقطیع کرنے کا طریقہ میں نے کچھ […]

مکمل تحریر پڑھیے »


ٹیگز:-
free counters